ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

جموں کے بکرم چوک میں ایک المناک حادثے میں گاڑی دریا تیوی میں گر گئی جس کے.

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ سادھنا ٹاپ پر خاتون سمیت تین افراد سات کلو نارکوٹکس.

گاندربل میں نوجوان کو مردہ پایا گیا وسطی ضلعع گاندربل کے گاڈوہ کھیتوں میں.

افغانستان میں حالات مستحکم ہونے کے بعد کچھ افغان ملی ٹینٹ وادی میںداخل ہوسکتے ہیں

   103 Views   |      |   Saturday, May, 28, 2022

اُس پار لانچنگ پیڈوں پر 300سے 400جنگجو دراندازی کی تاک میں

چین کا سرحدی علاقوں میں فوجی قیام گاہیںبنانا ہمارے لئے مسلسل تشویش کا معاملہ / لیفٹنٹ جنرل نروانے
سرینگر/09اکتوبر/سی این آئی// فوجی سربراہ نے کہا ہے کہ افغانستان میں حالات مستحکم ہونے کے بعد کچھ افغان ملی ٹنٹ جموں کشمیر میں داخل ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے مابین جنگ بندی معاہدے کے باوجود بھی پاکستان نے دراندازی کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے ۔ اس دوران فوجی سربراہ جنرل نروانے نے کہا ہے کہ چین کی جانب سے مشرقی لداخ میں فوجی جمائو اور فوجی قیام گاہیں تعمیر کرنا ہمارے لئے مسلسل باعث تشویش ہے تاہم فوج حالات پر کڑی نظر بنائے رکھے ہیں اور کسی بھی غیر متوقع سرگرمی کا بھر پور جواب دینے کیلئے تیار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چین نے مسلسل دوسرے موسم سرماء میں بھی اپنی فوجی وہاںکھڑا کررکھی ہیں تاہم ہماری فوج بھی مستعدی سے محاذ پر ٹکی ہوئی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق مشرقی لداخ کے علاقے میں چین کی طرف سے فوجی تعمیر ات اور بڑے پیمانے پر تعیناتی کو برقرار رکھنے کے لیے نئے انفراسٹرکچر کی ترقی تشویش کا باعث ہے اور بھارت چینی پی ایل اے کی تمام سرگرمیوں پر کڑی نظر رکھے ہوئے ہے۔فوجی سربراہ جنرل ایم ایم نروانے نے ہفتہ کو کہاکہ اگر چینی فوج دوسری موسم سرما میں تعیناتی کو برقرار رکھتی ہے تو اس سے کنٹرول لائن جیسی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے حالانکہ ایک فعال کنٹرول لائن نہیں ہے جیسا کہ پاکستان کے ساتھ مغربی محاذ پر موجود ہے۔چیف آف آرمی سٹاف نے کہا کہ اگر چینی فوج اپنی تعیناتی جاری رکھتی ہے تو ہندوستانی فوج بھی اپنی موجودگی برقرار رکھے گی جو کہ “پی ایل اے (پیپلز لبریشن آرمی) کی طرح ہوگی ۔ مشرقی لداخ میں لائن آف ایکچول کنٹرول (ایل اے سی) کے ساتھ کئی علاقوں میں ہندوستانی اور چینی مسلح فوجی تقریبا17 ماہ سے کھڑے ہیں حالانکہ دونوں فریق اس سال متعدد مذاکرات کے بعد کئی مقامات سے الگ ہوگئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ’’ہاں، یہ تشویش کی بات ہے کہ بڑے پیمانے پر تعمیرات واقع ہوئی ہیں اور اپنی جگہ پر جاری ہیں ، اور اس طرح کی تعمیر کو برقرار رکھنے کے لیے ، چین کی طرف بنیادی ڈھانچے کی ترقی کی برابر مقدار رہی ہے۔تو ، اس کا مطلب یہ ہے کہ وہ (PLA) وہاں رہنے کے لیے ہیں۔ ہم ان تمام پیشرفتوں پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں ، لیکن اگر وہ وہاں رہنے کے لیے ہیں تو ہم بھی وہاں رہنے کے لیے موجود ہیں۔جنرل ناراونے نے کہا کہ ہندوستان کی طرف تعمیر اور انفراسٹرکچر کی ترقی اتنی ہی اچھی ہے جتنی کہ پی ایل اے نے کی ہے۔

متعلقہ خبریں

جموں کے بکرم چوک میں ایک المناک حادثے میں گاڑی دریا تیوی میں گر گئی جس کے نتیجے میں ڈرائیو اور کنڈیکٹر کی موت ہوئی پولیس.

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ سادھنا ٹاپ پر خاتون سمیت تین افراد سات کلو نارکوٹکس اور 2آئی ای ڈی سمیت گرفتار کئے گئے پولیس.

گاندربل میں نوجوان کو مردہ پایا گیا وسطی ضلعع گاندربل کے گاڈوہ کھیتوں میں 28سال کے نوجوان کی نعش برآمد کرلی گئی پولس.

صدرِ جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبد للہ نے حضرت میرک شاہ صاحب ؒ کے سالانہ عرص مبارک باد.

کونہِ بل پانپور میں آج صبح ایک دلدوز سانحہ پیش آیا جسمیں دو افراد موت کی آغوش میں چلے گۓ۔ کونہِ بل علاقے میں کھیتوں.