ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

جموں کے بکرم چوک میں ایک المناک حادثے میں گاڑی دریا تیوی میں گر گئی جس کے.

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ سادھنا ٹاپ پر خاتون سمیت تین افراد سات کلو نارکوٹکس.

گاندربل میں نوجوان کو مردہ پایا گیا وسطی ضلعع گاندربل کے گاڈوہ کھیتوں میں.

جموںکشمیر کے لوگ سڑکوں کی تعمیر اور بجلی نہیں چاہتے

   84 Views   |      |   Saturday, May, 28, 2022

دفعہ 370کی بحالی یہاں کے عوام کا زور دار مطالبہ ہے ۔ پروفسیر سوز

دفعہ 370کی بحالی یہاں کے عوام کا زور دار مطالبہ ہے ۔ پروفسیر سوز
سرینگر/23ستمبر/سی این آئی// سینئر سیاسی لیڈر اور سابق وزیر پروفیسر سیف الدین سوز نے کہا ہے کہ ایک وقت آئے گا جب مرکز کو کشمیری عوام کی آواز سن کر دفعہ 370کو واپس بحال کرنا ہوگا۔ انہوںنے کہا کہ وزراء کے دوروں سے حالات بہتر ہونے کی عکاسی کی جارہی ہے جبکہ اصل حقائق اس کے برعکس ہے ۔ انہوںنے جموں بند ہونے کے معاملے پر کہا کہ کشمیریوں کو بھی اس وقت جموں کا ساتھ دینا ہوگا۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق سینئر سیاسی لیڈر اور سابق وزیر پروفیسر سیف الدین سوز نے کہا کہ وزیر اعظم مودی اور دیگر وزراء جھوٹ بول رہے ہیں کہ جموں کشمیر میں حالات بہتر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس دفعہ 370کے خاتمہ کے بعد جموں کشمیر کے لوگ دلی سے دور ہوگئے ہیں ۔ بی جے پی نے کشمیر اور یونین کے درمیان دوری پیدا کی ہے ۔ یہاںپر وزیر دورے پر آتے رہتے ہیں یہ صرف سیاسی ڈرامہ ہے یہ لوگ یہاں کے عام لوگوں سے نہیں مل سکتے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ دفعہ 370پھر سے بحال ہوکے رہے گا اس سلسلے میں انہوںنے کہا کہ میرا ماننا ہے کہ ایک عوامی تحریک اُبھرے گی جس میں لوگ 370کی بحالی کا مطالبہ کریں گے اور مرکز اس تحریک کو دبا نہیں سکے گی ۔ انہوں نے کہاکہ میں امید کرتا ہوں کہ یہ تحریک گولی اور ڈنڈے کے بغیر ہوگی کیوںکہ یہ راستہ ٹھیک نہیں ہے ۔ پروفیسر سوز نے سی این آئی کے ساتھ خصوصی انٹرویو میں مزید کہا کہ یہاں کے لوگ سڑک بجلی اور کھمبے نہیں چاہتے ۔ بلکہ یہ’’ اندرونی خود مختاری چاہتے ہیں ‘‘پروفیسر کا کہنا ہے کہ جموں کشمیر میں ڈوگرہ، سکھ اور مغل راج بھی تھا انہوں نے بھی اپنے دور میں تعمیر و ترقی کے کام کئے ہیں اسلئے یہ کوئی مسئلہ نہیں ہے ۔ بلکہ اصل بات یہ ہے کہ کیا دلی ایسا کام کرتی ہے جس میں یہاں کے عوام کے دلوں میں سکون اور دماغ میں انتشار نہ ہو۔ سوز نے کہاکہ بی جے پی رشتے کی بنیاد خراب کردی ہے۔ آج کل جو وزیر یہاں آرہے ہیں وہ تین یا چار روز تک یہاں رہ کر واپس جاتے ہیں اس سے دل کی دوری ختم نہیں ہوسکتی کیوں کہ یہ لوگ کشمیر کی اصل تواریخ سے نابلد ہے ۔ وہ کسی گمنام شخص سے بات کرتے خوش ہوں گے ۔ میرے پاس آکر بات نہیں کرسکتے کیوں کہ میں پولیٹیکل وژن رکھتا ہوں اور سیاست پر بات کرسکتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ مودی سرکار ٹٰکس کا پیسہ بربادکرتی ہے ۔ پہلے یہاں یورپی یونین کا وفد لایا ان پر زر کثیر خرچ کیا اور اب یہ وزراء کے دوروں پر سرکاری خزانہ لٹایا جارہا ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جب تک آپ سچائی پر نہیں آئیںگے بات نہیں کر یں گے اور بات نہیں سنیں گے تب تک کوئی مسئلہ حل نہیں ہوسکتا ، زبردستی سے کوئی بات نہیں بنے گی ۔ انہوںنے مزید کہا کہ دفعہ 370کی جو بنیا دہے وہ ایک رشتے کی بنیاد پر ہے جس کو مودی سرکار نے تباہ کردیا ۔ انہوںنے کہا کہ پارلیمنٹ کے قانون سے رشتوںکے بدل نہیں سکتے اور یہ دفعہ ختم نہیں ہوسکتی کیوں کہ پارلیمنٹ کے قانون سے بھی ایک بڑا قانون ہے اورہ وہ عوام کی عدالت ہے ، کشمیری عوام دلی سے پوچھیں گے کہ جموں کشمیر کا رشتہ بھارت کے ساتھ کس بنیاد پھر رکھا گیا تھا۔ انہوںنے کہا کہ ہمیں سٹیٹ ہڈ نہیں مانگنا چاہئے کیوں کہ سٹیڈ ہڈ دینے کا مرکز پابند ہے ہمیں وہ مانگنا چاہئے جو ہم سے چھینا گیا ہے اور وہ جموں کشمیر کی داخلی خود مختاری ہے ۔ انہوںنے الیکشن کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ انتخابات میں سبھی پارٹیوں کو حصہ لینا چاہئے کیوں کہ یہ جمہوری عمل ہے جس سے دور نہیں رہا جاسکتا ۔

متعلقہ خبریں

جموں کے بکرم چوک میں ایک المناک حادثے میں گاڑی دریا تیوی میں گر گئی جس کے نتیجے میں ڈرائیو اور کنڈیکٹر کی موت ہوئی پولیس.

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ سادھنا ٹاپ پر خاتون سمیت تین افراد سات کلو نارکوٹکس اور 2آئی ای ڈی سمیت گرفتار کئے گئے پولیس.

گاندربل میں نوجوان کو مردہ پایا گیا وسطی ضلعع گاندربل کے گاڈوہ کھیتوں میں 28سال کے نوجوان کی نعش برآمد کرلی گئی پولس.

صدرِ جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبد للہ نے حضرت میرک شاہ صاحب ؒ کے سالانہ عرص مبارک باد.

کونہِ بل پانپور میں آج صبح ایک دلدوز سانحہ پیش آیا جسمیں دو افراد موت کی آغوش میں چلے گۓ۔ کونہِ بل علاقے میں کھیتوں.