ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

سرینگر / 24مئی /این این این //سرینگر کے صورہ علاقے میں مشتبہ عسکریت پسندوں کی.

سرینگر / 24مئی /این این این//نیشنل کانفرنس کے اراکین پارلیمان ایڈوکیٹ محمد.

سرینگر / 24مئی /این این این /جنوبی ضلع اننت ناگ کے سنگم علاقے میںسڑک کے المناک.

ایوان زیریں لوک سبھامیں مرکزی بجٹ2022-23 پیش صحت بجٹ میں ٹیکنالوجی کا مرکزی مقام ہر گھر نل سے جل یوجنا کیلئے60 ہزار کروڑ روپے کا الاٹمنٹ// نرملاسیتارامن

   127 Views   |      |   Tuesday, May, 24, 2022

پڑوسی ممالک پاکستان اور چین کے ساتھ دیرینہ سرحدی تنازعات موجود

سری نگر:یکم ،فروری:مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتارامن نے منگل کے روز پارلیمان کے ایوان زیریں لوک سبھامیں مرکزی بجٹ2022-23 پیش کرتے ہوئے کہا کہ آنے والے سال میں ملک کی شرح نمو9.27 فیصد رہنے کی امید ہے۔ نرملاسیتا رمن نے کہا کہ ترقی کے 4 ستونوں پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے کہاکہ جامع ترقی، پیداواری صلاحیت میں اضافہ، توانائی کی منتقلی اور آب و ہوا کی کارروائی اولین ترجیحات ہیں۔انہوںنے کہاکہ سالانہ بجٹ 75 سے ہندوستان کو 100 تک معیشت کا بلیو پرنٹ یاخاکہ دیتا ہے۔جے کے این ایس کے مطابق وزیر خزانہ نرملا سیتارامن نے کہاکہ بجٹ2022-23 میں مرکزی حکومت کے10.68 لاکھ کروڑ روپے کے موثر سرمایہ خرچ کا تخمینہ لگایا گیا ہے جو کہ جی ڈی پی کا تقریباً 4.1 فیصد بنتا ہے۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ جنوری 2022 کے مہینے کیلئے جی ایس ٹی کی مجموعی وصولی 1,40,986 کروڑ روپے ہے ،جو 2017 میں ٹیکس کے آغاز کے بعد سے سب سے زیادہ ہے۔ڈیجیٹل کرنسی کے لئے ایک بڑے دباؤ میں، مرکزی وزیر خزانہ نرملاسیتا رمن نے کہا کہ ڈیجیٹل روپیہ بلاک چین ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے آر بی آئی کے ذریعہ 2022-23سے شروع کیا جائے گا۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ اس سے معیشت کو بڑا فروغ ملے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ کسی بھی ورچوئل ڈیجیٹل اثاثہ کی منتقلی سے حاصل ہونے والی آمدنی پر30 فیصد کی شرح سے ٹیکس عائد کیا جائے گا۔وزیر خزانہ نرملا سیتارمن کے ذریعے پارلیمنٹ میں پیش کیے گئے عام بجٹ میں ٹیکنالوجی نے صحت کے شعبے میں ایک مرکزی مقام حاصل کیا ہے دو نئی ڈیجیٹل اسکیموں کا اعلان کیا گیا ہے جو یہ اشارہ دیتا ہے کہ ڈیجیٹل ٹیکنالوجی ملک بھر میں صحت کی رسائی اور حفظان صحت سہولتوں کی توسیع میں اہم کردار نبھا رہی ہے آج ہوئے اعلانات میں کووڈ19 وبا کی جھلک نظر آتی ہے۔ مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتارمن نے اْن لوگوں کے تئیں ہمدردی کاا ظہار کیا ہے جنہوں نے عالمی وبا کے سبب صحت اور اقتصادی سطح پر برے حالات کاسامنا کیا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ پچھلے 2برسوں میں صحت بنیادی ڈھانچے میں تیزی سے اصلاحات کے سبب ملک آج مضبوط پوزیشن میں کھڑا ہے۔ اپنی بجٹ تقریر میں انہوں نے کہا کہ ہماری ٹیکہ کاری مہم کی رفتار اور کووریج نے وبا سے لڑنے میں کافی مدد کی ہے۔ وزیر خزانہ نے کہا ‘‘مجھے پورا اعتماد ہے کہ سب کے پریاس سے ہم مضبوط شرح ترقی کے اپنے اس سفر کو جاری رکھیں گے‘‘۔ نرملا سیتارمن نے اس بات کو اْجاگر کیا کہ پچھلے برس کے بجٹ میں کیے گئے اقدامات نے کافی اچھی پیش رفت کی ہے جس کے لئے اس بجٹ میں بھی موزوں اور مناسب رقم مختص کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ صحت بنیادی ڈھانچے کو مستحکم کرنا، ٹیکہ کاری پروگرام کا تیزی کے ساتھ نفاذ اور وبا کی موجودہ لہر کے تئیں ملک کے تیز ردعمل اس کے واضح شواہد ہیں۔قومی ڈیجیٹل صحت ایکو سسٹم کیلئے ایک نئے کھلے پلیٹ فارم کا آغاز کیاجائیگا۔ اس میں وسیع طور سے صحت فراہم کرنے والوں اور صحت سہولتوں کے ڈیجیٹل اندراج، منفرد صحت شناخت اور مشترکہ فریم ورک شامل ہوں گے اور یہ صحت سہولتوں تک آفاقی رسائی فراہم کریگا۔مرکزی وزیر خزانہ نے اس بات کو تسلیم کیا کہ وبا نے سبھی عمر کے لوگوں میں ذہنی صحت کے مسائل پیدا کیے ہیں۔ معیاری ذہنی صحت کونسلنگ اور حفظان صحت خدمات تک بہتر رسائی فراہم کرنے کیلئے آج ’قومی ٹیلی ذہنی صحت پروگرام‘کا اعلان کیا گیا۔ اس میں 23 ٹیلی،ذہنی صحت مہارت کے مراکز کا ایک نیٹ ورک شامل ہوگاجس میں نیم ہنس نوڈل مرکز کے طور پر کام کریگا۔ انٹرنیشنل انسٹی ٹیوٹ آف انفارمیشن ٹیکنالوجی، بنگلور (آئی آئی آئی ٹی بی) اس کے لئے ٹیکنالوجی تعاون فراہم کریگا۔وزیر خزانہ نرملا سیتارمن نے کہا ہے کہ ہر گھر نل سے جل یوجنا کے تحت پچھلے دو سال کے دوران ساڑھے پانچ کروڑ گھروں کو جوڑا گیا ہے اور سال2022-23 کے بجٹ میں اس منصوبے کیلئے 60 کروڑ روپے کا الاٹمنٹ کیا گیا ہے۔نرملا سیتارمن نے منگل کو لوک سبھا میں مال سال2022-23 کیلئے بجٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے کے تحت اب تک کْل ساڑھے8 کروڑ سے زیادہ گھروں کو جوڑا گیا ہے اورپچھلے دو سال کے دوران اس سے ساڑھے پانچ کروڑ کنبے جڑے ہیں۔انہوں کہا،’’ہر گھر نل سے جل ‘ کے تحت اب تک 8.7 کروڑ گھروں کو جوڑا جا چکا ہے جن میں سے پچھلے دو سال کے دوران 5.5 کروڑ گھروں تک نل سے جل پہنچانے کا انتظام کیا گیا ہے۔مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتارمن نے کہا کہ سال 2022-23کیلئے 3.8کروڑ گھروں تک نل سے جل پہنچانے کیلئے 60 ہزار کروڑ روپے کا التزام کیا گیا ہے۔حکومت نے میک ان انڈیا کی بنیاد پر دفاعی شعبے میں خود کفیل ہونے (آتم نربھرتا) کی طرف بڑا قدم اٹھاتے ہوئے خریداری کے بجٹ کا 68 فیصد ملکی کمپنیوں کے لیے مختص کیا گیا ہے وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے منگل کو لوک سبھا میں مالی سال 2022-23کا بجٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ ملکی کمپنیوں سے دفاعی شعبے میں فکسڈ پرچیز (متعینہ خریداری)بجٹ کا 68 فیصد حصہ خریدنے کا التزام کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ نجی شعبے کی حصہ داری کو بڑھانے کے لیے بھی ایک اہم قدم اٹھایا گیا ہیجس کے تحت بجٹ میں دفاعی تحقیق اور ترقی کے لئے متعین الاٹمنٹ کی 25 فیصد رقم نجی شعبے کے ساتھ تعاون میں خرچ کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ نجی کمپنیوں کے لیے نئی ٹیکنالوجی کے ٹیسٹ اور اس کے تصدیق کے لیے ایک خود مختار ادارہ شکیل دیا جائے گا۔ وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن نے منگل کو اگلے مالی سال کا مرکزی بجٹ پیش کیا، جس میں انفرادی یا ملازمت پیشہ افراد کو ٹیکس میں کوئی رعایت نہیں دی گئی ہے اور نہ ہی ٹیکس کی شرحوں میں کوئی تبدیلی کی گئی ہے۔ٹیکس کی پرانی شرحیں اور نظام برقرار رہے گا لیکن ڈیجیٹل کرنسی میں لین دین کرنے والوں کو اس سے ہونے والی آمدنی پر30 فیصد ٹیکس ادا کرنا ہوگا ۔وزیرخزانہ نرملا سیتا رمن نے کہا کہ ڈیجیٹل سامان کی خریداری پر خرچ کے علاوہ کوئی چھوٹ نہیں دی جائے گی۔ نقصان ہو جائے تو بھی ریلیف نہیں ملے گا۔ ایک مقررہ حد سے زیادہ ورچوئل اثاثوں کی منتقلی پر ایک فیصد ٹی ڈی ایس وصول کیا جائے گا۔ اسے بطور تحفہ دینے پر بھی ٹیکس لگے گا۔ طویل مدتی کیپٹل گین پر سرچارج کی حد 15 فیصد رکھی گئی ہے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ نئی مینوفیکچرنگ کمپنیوں کیلئے15 فیصد کارپوریٹ ٹیکس کی شرح کو مارچ 2024 تک بڑھا دیا گیا ہے۔اس کے ساتھ ہی 31مارچ 2023 تک قائم ہونے والے اسٹارٹ اپ کو بھی ٹیکس ریلیف کا فائدہ ملے گا۔انہوں نے کہا کہ کوآپریٹو کمپنیوں پر لگنے والے کم از کم متبادل ٹیکس (میٹ) کی شرح کو 18 فیصد سے کم ٹیکس 15 فیصد ٹیکس دیا گیا ہے۔اس کے ساتھ ہی نئی پینشن اسکیم میں ریاستی ملازمین کی حصہ داری کیلئے10 فیصد پر ملنے والی ٹیکس راحت کی حد کو بڑھاکر 14 فیصد کرنے کی تجویز کی گئی ہے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ چھاپے کے دوران برآمد اور ضبط غیر ظاہر شدہ آمدنی کیلئے کسی طرح کا نقصان نہیں ہونے دیا جائے گا۔آمدنی پر کسی قسم کے سرچارج یا سیس کو کاروباری خرچ کے طورپر نہیں دکھایا جا سکے گا۔

متعلقہ خبریں

سرینگر / 24مئی /این این این //سرینگر کے صورہ علاقے میں مشتبہ عسکریت پسندوں کی فائرنگ میں پولیس اہلکار اور اس کی بیٹی.

سرینگر / 24مئی /این این این//نیشنل کانفرنس کے اراکین پارلیمان ایڈوکیٹ محمد اکبر لون اور جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے دھان.

سرینگر / 24مئی /این این این /جنوبی ضلع اننت ناگ کے سنگم علاقے میںسڑک کے المناک حادثے میں 23سالہ موٹر سائیکل سوار لقمہ.

سرینگر / 24مئی /این این این //جنوبی ضلع کولگام کے ادی بل وٹو علاقے میں نالہ ویشو کے نزدیک ایک عدم شناخت شہری کی نعش.

نوٹ گزشتہ برسوں کے افسانوی ایونٹس کی کامیابی کو دیکھتے ہوئے ولر ادبی فورم نے اس سال بھی فن افسانہ کو فروغ دینے کے.