ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

سرینگر /22مئی / این این این
انتظامیہ کی جانب سے رہبر جنگلات، رہبر زراعت،.

سرینگر /22مئی / این این این بارشوں کے بعد جموں کشمیر کے کئی علاقوں میں شبانہ.

کیمپ میں سینکڑوں مریضوں کا طبی معائنہ کیا گیا اور مفت ادویات بھی تقسیم کی.

سال 2021 میں سینئر علیحدگی پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کی پُر امن تجہیز و تکفین بڑی کامیابی تھی / وجے کمار

   68 Views   |      |   Sunday, May, 22, 2022

۔کشمیر میں رواں برس47مقامی سمیت 62 عسکریت پسند مارے گئے: آئی جی پی

ہائی بریڈ عسکریت سال 2022کیلئے ایک بڑا چیلنج ہوگا ، پولیس و فورسز متحرک
سرینگر/31دسمبر/ہائی بریڈ عسکریت کو سال 2022کیلئے ایک بڑا چیلنج قرا ر دیتے ہوئے آئی جی پی کشمیر وجے کمار نے کہا کہ سال 2021 میں سینئر علیحدگی پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کے پُر امن تجہیز و تکفین بڑی کامیابی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ فی الوقت کشمیر میںچار اعلیٰ کمانڈروں سمیت 168جنگجو سرگرم ہے اور مقامی و غیر مقامی جنگجوئوں کی تعداد قریبا ایک جیسا ہے ۔ آئی جی پی نے مزید کہا کہ سال 2021میں 171 جنگجو مارے گئے جن میں 19 پاکستانی جبکہ 152 مقامی جنگجو تھے ۔ اسی دوران انہوں نے کہا کہ حیدر پورہ سرینگر جھڑپ سے متعلق خصوصی تحقیقاتی ٹیم کے رپورٹ پر فیصلہ سنانے کیلئے صرف عدالت مجاز ہے اور کسی بھی سیاسی لیڈر، میڈیا ادارے یا مہلوکین کے گھر والوں کو کوئی حق نہیں ہے کہ و ہ پولیس کی تحقیقات کو غلط قرار دیں ۔ سی این آئی کے مطابق پولیس کنٹرول روم سرینگر میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آئی جی پی کشمیر وجے کمار نے کہا کہ سال 2021میں جو پولیس کیلئے سب سے بڑی کامیابی تھی کہ وہ سینئر علیحدگی پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کے پُر امن تجہیز و تکفین تھی کیونکہ اس وقت کشمیر میں مکمل طور پر امن رہا ۔ انہوںنے کہا کہ اس امن و قانون کی صورتحال بالکل پر امن رہی اور کوئی بھی نا خوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔ آئی جی پی کشمیر نے مزید کہا کہ سال 2022کیلئے جموں کشمیر اور سیکورٹی فورسز کیلئے ہائی بریڈ عسکریت سے نمٹنا بڑا چلینج ہوگاکیونکہ یہ وہ جنگجو ہیں جن کا پولیس تھانوں میں کوئی ریکارڈ نہیں ہوتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سی سی ٹی و ی فوٹیج کا جائیزہ لینے کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے کہ 17سال کے لڑکے پولیس اور سیکورٹی فورسز پر حملہ کر رہے ہیں اور ان لڑکوں کے بارے میںکوئی بھی جانکاری نہ پولیس تھانوں میںہے اور نہ ہی انہیںکسی زمرے میں رکھا گیا ہے ۔ آئی جی پی کشمیر کا مزید کہنا تھا کہ کچھ سیاسی لیڈران نے ’’ ہائی بریڈ ‘‘ عسکریت والی ٹرم پر سوالات کھڑا کئے تھے تاہم حقیقت یہ ہے کہ پولیس نے اس ٹرم کو سال 2021کے ماہ جنوری میں پیش کیا ہے ۔ وجے کمار نے کہا کہ پولیس اہلکاروں کو آسان طریقے سے نشانہ بنانے کے عمل کی روک تھام کو یقینی پولیس کے سامنے دوسرا بڑا چیلنج ہے۔انہوں نے کہا: ’ملی ٹنٹ نہتے پولیس اہلکاروں پر حملے کرتے ہیں کچھ کو مسجدوں سے نکلتے ہوئے مارا گیا کچھ کو بازاروں میں مارا گیا تو کچھ کو گھروں میں مارا گیا‘۔ان کا کہنا تھا کہ پولیس سال2022 کے دوران ایسے حملوں کو روکنے کے لئے کام کرے گی۔آئی جی پولیس نے کہا کہ سال 2021 کے دوران 171 ملی ٹنٹ مارے گئے جن میں 19 پاکستانی جبکہ 152 مقامی جنگجو تھے۔انہوں نے کہا کہ سال 2021 کے دوران 34 عام شہری مارے گئے جبکہ سال 2020 میں 37 شہری ہلاک ہوئے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ سال 2021 کے دوران جنگجو تنظیموں کے قریب تمام اعلیٰ کمانڈروں کو مارا گیا اس وقت صرف چار کمانڈر وادی میں سر گرم ہیں۔آئی جی پی نے کہا کہ سال 2021 کے دوران تصادم آرائیوں اور امن و قانون کی صورتحال کی بحالی کے دوران کسی عام شہری کی موت واقع نہیں ہوئی۔انہوں نے کہا کہ منشیات کی وبا کا قلع قمع کرنا پولیس کی ترجیحات میں شامل رہے گا نیز خواتین خلاف ہونے والے جرائم کی روک تھام کو بھی یقینی بنایا جائے گا ۔ اسی دوران انہوں نے کہا کہ حیدر پورہ سرینگر جھڑپ سے متعلق خصوصی تحقیقاتی ٹیم کے رپورٹ پر فیصلہ سنانے کیلئے صرف عدالت مجاز ہے اور کسی بھی سیاسی لیڈر، میڈیا ادارے یا مہلوکین کے گھر والوں کو کوئی حق نہیں ہے کہ و ہ پولیس کی تحقیقات کو غلط قرار دیں ۔ آئی جی پی کشمیر نے کہا کہ اگر مہلوکین کے لواحقین پولیس تحقیقات سے مطمئن نہ ہے تو وہ این آئی اے ، سی بی آئی یا دیگر ایجنسیوں سے اس کی تحقیقات کرائیں جبکہ انہوں نے سیاسی لیڈران سے تاکید ہے کہ وہ پولس تحقیقات پر سوالات کھڑا کرکے لوگوں کو اکسانے سے باز رہیں ۔

متعلقہ خبریں

سرینگر /22مئی / این این این
انتظامیہ کی جانب سے رہبر جنگلات، رہبر زراعت، اور رہبر کھیل کے تحت ہوئیں تعیناتیوں.

سرینگر /22مئی / این این این بارشوں کے بعد جموں کشمیر کے کئی علاقوں میں شبانہ درجہ حرارت معمول سے کچھ نیچے درج کیا گیا.

کیمپ میں سینکڑوں مریضوں کا طبی معائنہ کیا گیا اور مفت ادویات بھی تقسیم کی گئیں پلوامہ/ تنہا ایاز/ جنوبی ضلع پلوامہ.

سرینگر /21مئی // این این این سرینگر جموں شاہراہ پر خونی نالے کے قریب زیر تعمیر ٹنل مہند م ہونے کے بعد لاپتہ مزدوروں.

صدرِ نیشنل کانفرنس ڈاکٹر فاروق عبداللہ (رکن پارلیمان) نے آج نٹی محلہ میر بحری کلان رینہ واری (ڈل) جاکر وہاں گذشتہ.