ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

جموں کے بکرم چوک میں ایک المناک حادثے میں گاڑی دریا تیوی میں گر گئی جس کے.

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ سادھنا ٹاپ پر خاتون سمیت تین افراد سات کلو نارکوٹکس.

گاندربل میں نوجوان کو مردہ پایا گیا وسطی ضلعع گاندربل کے گاڈوہ کھیتوں میں.

ہندوپاک سرحدی کشیدگی کے باعث ہزاروں ایکٹر اراضی بنجر بن گئی تھی

   75 Views   |      |   Sunday, May, 29, 2022

ہندوپاک سرحدی کشیدگی کے باعث ہزاروں ایکٹر اراضی بنجر بن گئی تھی

دو دہائیوں بعد جموں کے سرحدی علاقوں میں کھیتی باڑی دوبارہ شروع
سرینگر/16دسمبر/ ہندوپاک سرحدوں پر دہائیوں کشیدگی رہنے بعد کسانوں نے جموں ڈویژن میں پھر سے کھیتی باڑی شروع کردی ۔ اس موقعے پر ان کے ہمراہ بی ایس ایف کے اہلکار بھی موجود تھے جنہوںنے کسانوںکو بے خوف کام کرنے کی صلاح دی۔ اس موقعے پر بتایا گیا کہ 150ہیکٹراراضی پر کھیتی باڑیکی جارہی ہے۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق کسانوں نے پاک بھارت سرحد پر بوائی شروع کر دی، بی ایس ایف کے جوان حفاظتی حصار کے طور پر 20-20 فٹ پر کھڑے ہیں۔خوف اور تجسس کے احساس کے ساتھ 19 سال بعد اپنے کھیتوں میں پہنچنے والے کسانوں نے سب سے پہلے کھیت کی مٹی کو چوما۔ پھر اللہ کا شکر ادا کیا اور ربیع سیزن کی فصلیں لگانے کے لیے ٹریکٹر چلانے لگے۔ ساتھ ہی پاکستان کی سمت میں ہر 20 فٹ کے فاصلے پر بی ایس ایف کے اہلکار تعینات تھے۔ قطار میں کھڑے سپاہی کسانوں کو بے خوف ہوکر کاشتکاری کرنے کی ترغیب دیتے رہے۔ پاک بھارت بین الاقوامی سرحد پر یہ نظارہ برسوں سے جدا ماں بیٹے کی ملاقات جیسا تھا۔اس دوران کئی کسان بھی جذباتی ہو گئے۔ تقریباً دو دہائیوں کے بعد پہلی بار کسانوں نے اپنے کھیتوں کی مٹی کو چھوا اور کام کرنا شروع کیا ۔ جوش و خروش میں کئی کسانوں نے دن کا کھانا بھی نہیں کھایا۔ پاکستانی گولہ باری کی وجہ سے 2002 سے تربندی کے پار ہزاروں ایکڑ اراضی خالی پڑی ہے۔ گزشتہ سال انتظامیہ اور بارڈر سیکورٹی فورس نے اپنی سطح پر کھیت میں ہل چلا کر فصل کی کاشت کی تھی۔ یہ ایک قسم کا امتحان تھا۔ سرحد پر حالات معمول پر آنے کے بعد کسانوں کو اس موسم سے کھیتی شروع کرنے کی ترغیب دی جا رہی ہے۔کئی بار کسان تیار ہو گئے لیکن سیکورٹی وجوہات کی وجہ سے کام نہ ہو سکا۔ دو دن پہلے ہیرا نگر سیکٹر کے کسان تربندی کے قریب سے ٹریکٹر، کھاد اور بیج لے کر برنگ واپس آئے تھے۔ بدھ کو، وہ گھڑی آخرکار پہنچ گئی۔ کسان محکمہ زراعت کی ٹیم کے ساتھ چھان ٹانڈہ گاؤں میں صبح 9 بجے کاشتکاری کے لیے گئے۔ بی ایس ایف کی حفاظت میں شام 4 بجے تک یہاں کھیت میں ہل چلانے کا کام جاری رہا۔ پہلے دن تقریباً 15 ایکڑ اراضی پر ٹریکٹر چلائے گئے۔ بی ایس ایف کے اہلکار کسانوں کی حفاظت کے لیے مسلسل کھڑے رہے۔ کسان کہیں رک جاتے تو سپاہی انہیں کہتے کہ تم محفوظ ہو، بے خوف ہو کر ٹریکٹر چلاتے رہو۔19 سال کے بعد جب کسانوں کو گھیراؤ سے پہلے کھیتوں میں کام کرنے کا موقع ملا تو وہ بہت خوش ہیں۔ ہماری ٹیم بھی موجود تھی۔ محکمہ کی جانب سے کسانوں کو کھادیں فراہم کی گئیں۔ پہلے دن تقریباً 15 ایکڑ اراضی کاشت کے لیے تیار کی گئی ہے جس میں کھاد ڈالی گئی ہے۔ 150 ایکڑ اراضی پر فصل کی بوائی جائے گی۔

متعلقہ خبریں

جموں کے بکرم چوک میں ایک المناک حادثے میں گاڑی دریا تیوی میں گر گئی جس کے نتیجے میں ڈرائیو اور کنڈیکٹر کی موت ہوئی پولیس.

پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ سادھنا ٹاپ پر خاتون سمیت تین افراد سات کلو نارکوٹکس اور 2آئی ای ڈی سمیت گرفتار کئے گئے پولیس.

گاندربل میں نوجوان کو مردہ پایا گیا وسطی ضلعع گاندربل کے گاڈوہ کھیتوں میں 28سال کے نوجوان کی نعش برآمد کرلی گئی پولس.

صدرِ جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبد للہ نے حضرت میرک شاہ صاحب ؒ کے سالانہ عرص مبارک باد.

کونہِ بل پانپور میں آج صبح ایک دلدوز سانحہ پیش آیا جسمیں دو افراد موت کی آغوش میں چلے گۓ۔ کونہِ بل علاقے میں کھیتوں.