"بزم عزیز" کی ماہانہ طرحی نشست منعقد 0

“بزم عزیز” کی ماہانہ طرحی نشست منعقد

بارہ بنکی(نامہ نگار) بزم عزیز کی ماہانہ طرحی نشست بزم کے صدر الحاج نصیر انصاری کے بر مکان پر منعقد ہوئی۔جس کی صدارت استاذ شاعر ضمیر فیضی نے کی، جب کہ شاندار طریقے سے نظامت کے فرائض ھزیل لعل پوری نے ادا کیے۔ مہمان خصوصی کے طور پر اختر جمال عثمانی، ایس ایم حیدر اور اصغر عثمانی موجود رہے۔ نشست میں مصرع طرح “کیا بھروسہ جہان فانی کا” پر کہے گئے اور پسند کیے گئے اشعار نظر قارئین ہیں۔
جا رہا ہے تو دل بھی لیتا جا
کیا کروں گا تری نشانی کا
ضمیر فیضی
جانے کیا کیا بہا کے لے جائے
کیا ٹھکانہ ہے بہتے پانی کا
الحاج نصیر انصاری
ایک دن اختتام ہوتا ہے
ہر فسانے کا ہر کہانی کا
ھزیل لعل پوری
جذبۂ عشق پال کر دیکھو
رخ بدل جائے گا کہانی کا
صغیر نوری
باغ ہر دم رہے پھلا پھولا
تجربہ گر ہو باغبانی کا
ماسٹر عرفان انصاری
کام کرتا ہے سب ضعیفی کے
اور بھرتا ہے دم جوانی کا
ڈاکٹر ریحان علوی
میں بھی قصہ ہوں اس کہانی کا
جس نے توڑا غرور پانی کا
ارشاد بارہ بنگوی
دیش کے قوم کے نہ آئے کام
فائدہ کیا پھر اس جوانی کا
آدرش بارہ بنکوی
خون پینے کی چھوٹ ہے لیکن
مانگتے ہیں حساب پانی کا
نفیس بارہ بنکوی
پاؤں ٹکتے نہیں ہیں باطل کے
سامنا جب ہو حق بیانی کا
بشر مسولوی
بچ کے رہنا یہ دور ہے یارو
ایک ظالم کے حکمرانی کا
عارف شہاب پوری
دشمنی ہے ازل سے دونوں میں
میل کیسے ہو آگ پانی کا
سرور کنتوری
شکر ہے زخم دے دیے تم نے
میں طلبگار تھا نشانی کا
طفیل زید پوری
جب بھی دریا میں ڈالنا کشتی
دیکھ لینا بہاؤ پانی کا
مسٹر امیٹھوی
قبر پر خود عذاب بن جائے
کام ایسا ہو زندگانی کا
صبا جہاں گیرابادی
جسم سے روح کب نکل جائے
کیا ٹھکانہ ہے زندگانی کا
نظر مسولوی
نشست کے اختتام پر بزم کے جنرل سیکریٹری ھزیل لعل پوری نے سبھی شعرا اور سامعین کا شکریہ ادا کیا۔ بزم کے صدر الحاج نصیر انصاری نے اعلان کیا کہ اگلی نشست “جہان میں کوئی صابر حسین سا نہ ہوا”سلام کے مصرح طرح پر ہوگا۔ سا- قافیہ،نہ ہوا۔ردیف ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں