معاشی کمزور صورتحال کے باوجود کشمیر میں گاڑیوں کی فروخت میں اضافہ 0

معاشی کمزور صورتحال کے باوجود کشمیر میں گاڑیوں کی فروخت میں اضافہ

مارچ2023تک کشمیر میں351633نئی کاروں کی رجسٹریشن ہوئی

سری نگر//21اگست/کووڈ19وبائی امراض کے بعد معاشی زبوں حالی کے باوجود، کشمیر میں آٹو مارکیٹ نے شماریاتی چارٹ میں سرفہرست غیر تجارتی گاڑیوں کے ساتھ آٹوموبائل کی فروخت میں غیر معمولی اضافہ ریکارڈ کیا ہے۔آٹوموبائل انڈسٹری میں قیمتوں میں اضافے کے باوجود، وادی کشمیر میں پچھلے کچھ سالوں میں غیر تجارتی گاڑیوں کی زبردست فروخت اور خریداری کی وجہ سے ہوا ہے۔وادی میں کاروں کی فروخت میں اضافے نے کشمیر میں کاروں کی منڈیوں کی زبردست ترقی کو فروغ دیا ہے، ہر سال ہزاروں نئی کاریں وادی کی سڑکوں پر آ رہی ہیں۔ریجنل ٹرانسپورٹ آفس سری نگر کے پاس دستیاب مجموعی شماریاتی اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ مارچ 2023 تک کشمیر میں 3,51,633 نئی کاروں کی رجسٹریشن ہوئی، جس میں سرینگر شہر 1,45,293 نئی کاروں کی زبردست رجسٹریشن کے ساتھ سرفہرست ہے، اس کے بعد ضلع بارہمولہ میں 43,919 نئی کاریں ہیں۔ ضلع بڈگام نجی کاروں کی 29,129 نئی رجسٹریشن کے ساتھ فہرست میں تیسرے نمبر پر ہے۔اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ کشمیر میں سال 2022 میں مارچ 2023 تک پرائیویٹ کاروں کی 24,016 نئی کاروں کی رجسٹریشن ہوئی۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ سری نگر میں سب سے زیادہ 7,686 نئی کاروں کی رجسٹریشن ریکارڈ کی گئی اور اس کے بعد بارہمولہ میں 3,482 نئی نجی کاروں کی رجسٹریشن ہوئی۔ آر ٹی او کے عہدیداروں نے کہاکہ سال 2022 میں مارچ 2023 تک جموں و کشمیر میں کل 51,927 نئی پرائیویٹ کاریں رجسٹر کی گئی ہیں۔حکام نے کہا کہ کاروں کی بڑھتی ہوئی فروخت خطے کے معاشی منظر نامے میں ایک فعال کردار کی عکاسی کرتی ہے۔انہوں نے کہاکہ کاروں کی فروخت اقتصادی سرگرمیوں کا ایک اہم اشارہ ہے۔ ہم نے ملک میں حالیہ دہائیوں میں کار مارکیٹ میں مجموعی طور پر نمو دیکھی ہے۔انہوں نے مزید کہاکہ جموں اور کشمیر اس رجحان سے مستثنیٰ نہیں ہے۔ ; تاہم، یہ ہماری جگہ پر بڑے پیمانے پر پبلک ٹرانسپورٹ سسٹم کی کمی کی نشاندہی کرتا ہے۔ ہمیں پبلک ٹرانسپورٹ کے استعمال کو تیز کرنے اور اسے مزید موثر بنانے کے لیے اقدامات کرنے ہوں گے۔ عام طور پر کار مارکیٹ کی ترقی کا انحصار ماس پبلک ٹرانسپورٹ سسٹم کی ترقی پر ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ مستقبل جیسا کہ اب نظر آرہا ہے وہ الیکٹرک کاروں کا ہے۔چونکہ وادی میں کاروں کا مضبوط کاروبار فروغ پا رہا ہے، بینکنگ سیکٹر کے ذریعہ فراہم کردہ آسانی سے دستیاب کار قرضوں نے اس خطے میں کاروں کی فروخت میں کافی ہلچل مچا دی ہے۔وادی کشمیر میں غیر تجارتی گاڑیوں کے سرکردہ ڈیلرز کی رائے ہے کہ ہر سال مارکیٹوں میں آنے والی نئی کاروں کی مانگ میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ بازاروں میں ہر سال فروخت ہوتی رہی ہے۔کار ڈیلروں کے مطابق گزشتہ سات مہینوں میںزیادہ نئی گاڑیاں فروخت کی گئی جبکہ وادی میں کاروں کی مارکیٹ ہمیشہ سے کافی اچھی رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں