پتھربازی وعسکریت میں ملوث نوجوان کے کسی بھی قریبی رشتہ دار کوسرکاری نوکری فراہم نہیں کی جائیگی 0

تشدد اور خون خراب کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہوتا ہے ، منی پورہ میں امن کی بحالی کیلئے کام جاری / امیت شاہ

شمال مشرقی ریاست سمیت ملک کے کسی بھی حصہ میں ’’اتحاد اور سالمیت‘‘متاثر نہیں ہونے دیں گے

تشدد اور خون خراب کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہوتا ہے ، منی پورہ میں امن کی بحالی کیلئے کام جاری / امیت شاہ

سرینگر /17مئی / شمال مشرقی ریاست سمیت ملک کے کسی بھی حصہ میں ’’اتحاد اور سالمیت‘‘کسی بھی قیمت پر متاثر نہیں ہونے دیں گے کی بات کرتے ہوئے وزیر داخلہ امیت شاہ نے کہا کہ تشدد اور خون خراب کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہوتا ہے ۔ سی این آئی مانیٹرنگ ڈیسک کے مطابق منی پورہ میںجاری کشیدگی پر میڈیانمائندوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ امیت شاہ نے کہا کہ شمال مشرقی ریاست میں امن کی بحالی ترجیحات میں شامل ہے اور اس کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ شمال مشرقی ریاست تو کیا ملک کے کسی بھی حصہ میں ’’اتحاد اور سالمیت‘‘کسی بھی قیمت پر متاثر نہیں ہونے دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی کسی بھی ریاست کی علاقائی سالمیت پر سمجھوتہ نہیں کیا جا سکتااور یقین دلایا کہ امن اور معمول کی بحالی ان کی ’’انتہائی ترجیح ‘‘ہے اور کہا کہ منی پورہ ریاست کے اتحاد اور سالمیت کو کسی بھی قیمت پر متاثر نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مرکز میں موجود سرکار ملک کے ہر ریاست اور علاقہ میں امن کے قیام کیلئے کوششیں جا ری رکھی ہوئی ہے اور کہیں پر بھی اس طرح کی کارورائیوں کو برداشت نہیں کیا جا سکتا ہے ۔ امیت شاہ نے کہا کہ تشد د اور خون خرابہ سے آج تک کچھ حاصل نہیں ہوا ہے اور تشدد نے جان و مال کو بھاری نقصان پہنچایا ہے اور فوج اور مرکزی نیم فوجی دستوں کی بھاری تعیناتی کے باوجود منی پور میں ایک بے چین سکون ہے۔ادھر معلوم ہوا ہے کہ منی پورہ میں جاری کشیدگی کے بیچ امیت شاہ نے دہلی میں کوکی ایم ایل اے کے ایک گروپ سے بھی ملاقات کی، جس کی تفصیلات ابھی تک معلوم نہیں ہیں۔امیت شاہ نے منی پورہ کے وزیر اعلیٰ سے یہ تفصیلات بھی پیش کرنے کو کہا ہے کہ تشدد سے متاثرہ لوگوں کیلئے ان کی آباد کاری کے علاوہ کیا کیا جا سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں