نئی قومی تعلیمی پالیسی کے تحت نیا حکمنامہ 66

نئی قومی تعلیمی پالیسی کے تحت نیا حکمنامہ

کلاس اول میں داخلہ کیلئے عمر چھ سال مقرر کرنے کی ہدایت

سرینگر /22فروری / نئی قومی تعلیمی پالیسی کے تحت وزارت تعلیم نے تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو کلاس اول میں داخلہ کیلئے کم از کم عمر چھ سال مقرر کرنے کی ہدایت دی ہے ۔ سی این آئی کے مطابق ملک بھر میں تعلیمی نظام میں بہتری کے چلتے نئی قومی تعلیمی پالیسی کے تحت وزارت تعلیم نے ایک حکمنامہ میں تمام ریاستوں کو ہدایت دی ہے کہ اول جماعت میں بچوں کے داخلہ کیلئے ان کی عمر چھ سال ہونی لازمی ہے ۔ نئی قومی تعلیمی پالیسی کے مطابق،بنیادی مرحلہ تمام بچوں (3 سے 8 سال کی عمر کے درمیان) کیلئے سیکھنے کے پانچ سال کے مواقع پر مشتمل ہے جس میں تین سال کی پری اسکول کی تعلیم اور پھر کلاس 1 اور 2 شامل ہیں۔اس طرح یہ پالیسی پری اسکول سے کلاس 2 تک بچوں کی بغیر کسی رکاوٹ کے سیکھنے اور ترقی کو فروغ دیتی ہے۔ یہ صرف آنگن واڑیوں یا سرکاری، سرکاری امداد یافتہ، نجی اور این جی اوز میں زیر تعلیم تمام بچوں کیلئے تین سال کی معیاری پری اسکول تعلیم تک رسائی کو یقینی بنا کر کیا جا سکتا ہے۔وزارت نے ریاستی حکومتوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کے انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ داخلہ کیلئے اپنی عمر کو پالیسی کے ساتھ ہم آہنگ کریں اور چھ سال یا اس سے اوپر کی عمر میں کلاس 1 میں داخلہ فراہم کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں